Health and Safety


ایک تازہ تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ یومیہ انگور کھانے سے جلد کی تیزابیت یا سورج کی روشنی میں جسم جلنے کے مسئلے سے بچا جا سکتا ہے۔
جلد کی تیزابیت یا جسم کے دھوپ میں جلنے کو انگریزی میں ’سن برن‘(Sunburn) کہتے ہیں۔
’سن برن‘(Sunburn) کا مسئلہ سورج کی الٹرا وائلٹ (یو وی) یا شعاؤں سے جلد کو جلانے سے پیدا ہوتا ہے اور سورج کی روشنی یا شعاؤں سے جلد کے جلنے کی متعدد وجوہات ہوسکتی ہیں۔
سورج کی روشنی سے جلد کے جلنے کی عام وجہ اسکن کا خراب ہونا ہوتا ہے اور اگر یہی مسئلہ شدت اختیار کر جائےتو اس سے جلد کی کینسر بھی ہوسکتی ہے۔
امریکا اور یورپی ممالک میں سالانہ لاکھوں افراد کو ان ہی مسائل کی وجہ سے جلد کی کینسر لاحق ہوجاتی ہے اور وہاں کے لوگ سورج کی تپش سے بچنے کے لیے مختلف طریقے آزماتے ہیں۔
وہاں ماہرین نے انگوروں کے جلد کی جلن پر اثرات کا جائزہ لینے کے لیے ایک محدود تحقیق کی، جس کے لیے انہوں نے تین درجن افراد کی خدمات حاصل کیں۔
طبی جریدے ’ایم ڈی پی آئی‘ میں شائع تحقیق کے مطابق امریکی ماہرین نے جلد کی جلن پر انگوروں کے اثرات جاننے کے لیے 24 سے تقریبا 56 سال کی عمر 36 رضاکاروں کی خدمات حاصل کیں، جس میں سے 7 افراد تحقیق کو ادھورا چھوڑ کر چلے گئے۔
بعد ازاں ماہرین نے رہ جانے والے 29 رضاکاروں پر تحقیق کی اور انہیں دو ہفتوں تک یومیہ تقریبا 400 گرام انگور کھانے کا کہا گیا۔
تحقیق میں شامل 16 مرد اور 15 خواتین میں سے نصف کو دو ہفتوں تک مختلف یعنی سرخ، گلابی، جامنی اور ہرے انگور کھانے کی ہدایت کرنے سے قبل انہیں دیگر متعدد غذائیں کھانے سے روکا گیا اور ان کے مختلف ٹیسٹس بھی کیے گئے جب کہ ان کی جلد پر شعاؤں کو برداشت کرنے کی حساسیت بھی چیک کی گئی۔
ماہرین نے دو ہفتوں بعد تمام رضاکاروں کے ٹیسٹس کیے، ان کے خون کے نمونے، پیشاب اور پاخانے کے ٹیسٹ بھی کیے گئے جب کہ ان کی جلد میں شعاؤں کی حساسیت کو بھی چیک کیا گیا۔
نتائج سے معلوم ہوا کہ یومیہ تقریبا 400 گرام انگور کھانے والے افراد کے جلد کی حساسیت بڑھ گئی تھی اور وہ سورج کی متوسط تپش کو زیادہ دیر تک برداشت کرنے کے قابل ہوگئے تھے اور انہیں کسی طرح کی جلد یا گرمائش کا احساس نہیں ہوا۔
جب کہ ایسے افراد کے خون، پیشاب اور پاخانے کے ٹیسٹس بھی کم انگور کھانے والے افراد کے مقابلے زیادہ بہتر آئے۔
ماہرین نے تجویز دی کہ جلد کی جلن جیسے مسائل سے دوچار افراد یومیہ 380 سے 400 گرام انگور کھائیں تو ان کی جلد سورج کی تپش کو برداشت کرنے کے اہل ہوجائے گی۔
ماہرین نے کہا کہ مذکورہ معاملے پر مزید تحقیق کی ضرورت ہے، تاہم انگوروں کو یومیہ غذا بنانے سے دیگر بھی کئی طرح کے طبی فوائد ہوسکتے ہیں۔


یورپی ملک ناروے میں کی جانے والی ایک تحقیق کے دوران درمیانی اور بڑھتی عمر میں شادی کرنے کے مزید طبی فوائد سامنے آگئے۔
اس سے قبل شادی اور غیر شادی شدہ زندگی پر متعدد تحقیقات سامنے آ چکی ہیں، جن میں شادی کے کئی فوائد بتائے جا چکے ہیں۔
اب ناروے میں کی جانے والی تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ شادی شدہ افراد زائد العمری میں دماغی امراض یا مسائل سے محفوظ رہتے ہیں۔
طبی جریدے ’نیشنل لائبریری آف میڈیسن‘ (این آئی ایچ) میں شائع ایک تحقیق کے مطابق جو افراد درمیانی یا بڑھتی عمر میں شادی کرلیتے ہیں، ان میں زائد العمری میں ڈمینشیا سمیت دماغی افعال کا خطرہ نمایاں طور پر کم ہوتا ہے۔
ڈمینشیا ایک ایسا مرض ہے، جس کا تاحال کوئی علاج دریافت نہیں ہوا، البتہ بھلکڑ پن اس مرض کو مختلف ادویات اور غذاؤں کے ذریعے قابو کیا جاتا ہے۔
تاہم دماغی افعال کے مرض کی ادویات موجود ہیں لیکن اس میں بھی زیادہ تر ادویات فائدہ مند ثابت نہیں ہوتیں۔
اس حوالے سے بھی ماضی میں متعدد تحقیقات سامنے آ چکی ہیں یادداشت کمزور ہونے اور دماغی طور پر غیر فعال ہونے کا زائد العمری سے گہرا تعلق ہے، یعنی یہ مرض بڑھتی عمر کے ساتھ خود بخود انسان کو جکڑ لیتے ہیں۔
تاہم انہیں روکنے کے کئی طریقے موجود ہیں، جن میں سے شادی بھی ایک طریقہ ہے۔
ناروے میں کی جانے والی تحقیق کے دوران ماہرین نے 8 ہزار 700 سے زیادہ 44 سے 65 سال کی عمر کے مرد و خواتین پر سروے کیا۔
سروے کے دوران ماہرین نے رضاکاروں کی شادی کی عمر، ان کے بچوں اور ان کی روز مرہ کی زندگی اور کھانے پینے کی عادتوں کو بھی چیک کیا۔
بعد ازاں ان افراد میں ڈمینشیا اور دماغی افعال سمیت دیگر ذہنی مسائل کا جائزہ لیا گیا۔
رضاکاروں میں ایسے افراد بھی شامل تھے جو غیر شادی شدہ یا پھر طلاق یافتہ بھی تھے اور بعض افراد کے شریک حیات ان سے بچھڑ گئے تھے۔
تحقیق کے دوران ان افراد میں ڈمینشیا یا دماغی کمزوری کے مسائل زیادہ پائے گئے جن کے پاس شریک حیات نہیں تھے۔
ماہرین نے پایا کہ جن افراد کی شادیاں برقرار ہیں، ان کی ذہنی صحت قدرے بہتر ہے اور وہ دماغی طور پر بھی فعال ہیں۔
تاہم ماہرین نے کہا کہ ایسا بلکل نہیں ہے کہ شادی بڑھتی عمر میں ڈمینشیا سے تحفظ فراہم کرتی ہے لیکن نتائج سے معلوم ہوا کہ شادی شدہ افراد میں مذکورہ مرض میں مبتلا ہونے کے امکانات 8 فیصد تک ہوجاتے ہیں۔
ماہرین کے مطابق یہ واضح نہیں ہے کہ شادی شدہ افراد کس طرح ڈمینشیا سے محفوظ رہنے سمیت دماغی طور پر فعال رہتے ہیں، تاہم بظاہر ایسا لگتا ہے کہ شادی شدہ افراد کے بچے اور خاندان ہوتا ہے، جن سے انہیں تنہائی سے نجات ملتی ہے اور وہ سماجی طور پر بھی متحرک رہتے ہیں اور ممکنہ طور پر اسی وجہ سے وہ دماغی طور پر متحرک رہتے ہیں۔
ماہرین کے مطابق شادی شدہ افراد جوڑے کی صورت میں ایک دوسرے کو سہارا بھی دیتے ہیں، جس سے ان کی ذہنی و دماغی صحت بہتر رہتی ہے اور بظاہر وہ جسمانی طور پر بھی اچھے ہوتے ہیں۔

عالمی ادارہ صحت نے کہا ہے کہ دل کی بیماری، کینسر اور ذیابیطس جیسی غیر متعدی بیماریاں عالمی سطح پر 74 فیصد اموات کی وجہ ہیں، ان بیماریوں کا باعث بننے والے عوامل پر قابو پاکر لاکھوں جانیں بچائی جا سکتی ہیں۔

ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق اقوام متحدہ کے ادارہ صحت رپورٹ ظاہر کرتی ہے کہ غیر متعدی بیماریاں 4 کروڑ 10 افراد کی موت کی وجہ بنتی ہیں جب کہ مرنے والوں میں 70 سال سے کم عمر کے ایک کروڑ 70 لاکھ افراد بھی شامل ہیں۔

نان کمیونل ڈیزیز یا غیر متعدی بیماریوں کو روکا جا سکتا ہے یہ بیماریاں اکثر غیر صحت مند طرز زندگی یا رہن سہن کے باعث ہوتی ہیں۔

 ‘پوشیدہ نمبرز’ کے عنوان سے تیار کی گئی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ دل ، کینسر، ذیابیطس اور سانس کی بیماریوں نے عالمی سطح پر ہلاکتوں کا باعث بننے کے لحاظ سے متعدی بیماریوں کو پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ 

عالمی ادارہ صحت کے اس طرح کی بیماریوں کو دیکھنے والے ڈویژن ہیڈ نے جنیوا میں صحافیوں کو بتایا کہ ہر 2 سیکنڈ میں 70 سال سے کم عمر کوئی شخص غیر متعدی بیماری سے مر رہا ہے۔

اس کے باوجود ان بیماریوں کے خلاف اقدامات کے لیے ملکی اور عالمی سطح پر بہت کم رقم خرچ کی جاتی ہے، یہ واقعی ایک المیہ ہے۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ موٹاپا یا ذیابیطس جیسی غیر متعدی بیماریوں کے شکار افراد میں وائرس سے متاثر ہونے کے بعد شدید بیمار ہونے اور مرنے کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے۔

غریب تر ممالک بد ترین متاثر

رپورٹ میں خبردار کیا گیا ہے کہ اعداد و شمار واضح تصویر پیش کرتے ہیں، مسئلہ یہ ہے کہ دنیا اس کی جانب توجہ نہیں دے رہی۔

 

عام خیال کے برعکس طرز زندگی کے باعث ہونے والی یہ بیماریاں امیر ممالک کے لیے اتنا بڑا مسئلہ نہیں ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ عالمی سطح پر ان بیماریوں سے ہونے والی قبل از وقت 86 فیصد اموات بہت کم اور لوئر مڈل کلاس آمدنی والے ممالک میں ہوتی ہیں۔

بینٹ میکلسن نے کہا کہ یہ مسئلہ نہ صرف صحت کا معاملہ ہے بلکہ یہ غربت کا مسئلہ بھی ہے، غریب ممالک میں اکثر لوگوں کو بیماریوں سے بچاؤ، علاج معالجے کی مطلوبہ سہولیات میسر ہی نہیں ہیں۔

 

ڈبلیو ایچ او کی جانب سے غیر متعدی بیماریوں کے حوالے سے لانچ گیا نیا ڈیٹا پورٹل ظاہر کرتا ہے کہ عالمی سطح پر سب سے زیادہ اموات کی وجہ بننے والی بیماری دل کی ہے جو کہ افغانستان اور منگولیا جیسے ممالک میں سب سے زیادہ اموات کا باعث بن رہی ہے۔

تمباکو کا استعمال، غیر صحت مند خوراک

تمباکو کا استعمال، غیر صحت بخش خوراک، شراب کا استعمال، جسمانی سرگرمیوں کی کمی اور فضائی آلودگی کو غیر متعدی بیماریوں میں اضافے کی اہم وجوہات قرار دیا جاتا ہے۔

صرف تمباکو کا استعمال ہی ہر سال 80 لاکھ سے زیادہ اموات کی وجہ ہے۔

ڈبلیو ایچ او سربراہ کے سینئر مشیر برائے غیر متعدی بیماریوں نے صحافیوں کو بتایا کہ ان میں سے 10 لاکھ سے زیادہ اموات تمباکو نوشی نہ کرنے کے باوجود اس سے متاثر ہونے والے معصوم لوگوں میں ہوتی ہیں۔

 

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ مزید 80 لاکھ اموات کی وجہ غیر صحت بخش غذا ہے جس میں بہت کم، بہت زیادہ یا انتہائی ناقص معیار کی خوراک کا استعمال شامل ہے۔

نقصان دہ الکحل کا استعمال سالانہ تقریباً 17 لاکھ افراد کو ہلاک کرتا ہے جب کہ جسمانی سرگرمیوں کی کمی ایک اندازے کے مطابق 8 لاکھ 30 ہزار اموات کی وجہ ہے۔


کریلوں کی سبزی عام طور پر کم عمر افراد کو اچھی نہیں لگتی، تاہم کچھ بڑی عمر کے لوگ بھی اس سبزی کے کڑوے پن کی وجہ سے اسے پسند نہیں کرتے۔
اگرچہ کریلوں کو اچھی طرح پکایا جائے تو پکنے کے بعد بھی ان میں کڑواہٹ رہتی ہے لیکن اگر کوئی ماہر شخص انہیں تیار کرے تو لوگ انگلیاں چاٹنے پر مجبور ہوجاتے ہیں۔
کریلوں کو کھانے والے افراد جہاں خود کو ہلکا محسوس کرتے ہیں، وہیں انہیں کھانے سے کئی طرح کے حیران کن طبی فوائد بھی ہیں۔
ماہرین صحت اور غذائیت کے مطابق کریلوں میں آئرن، میگنیشم، پوٹاشیم، وٹامن سی، کیلیشیم، فائبر، فاسفورس، زنک اور دیگر اجزا اچھی خاصی مقدار میں پائے جاتے ہیں، جس وجہ سے اس سبزی کے حیران کن فوائد ہوتے ہیں۔
وزن کم کرنے اور نظام ہاضمہ کے لیے بہتر
فائبر، سیلولوز اور زنک جیسے اجزا سے بھرپور ہونے کی وجہ سے کریلا نظام ہاضمہ کے لیے اینٹی بائیوٹک کی دوا کا کام کرتا ہے۔
کریلا قبض سے نجات دلانے سمیت نظام ہاضمہ کو بہتر بنانے کے علاوہ پیٹ میں پیدا ہونے والے کیڑوں اور قبض کا سبب بننے والے انفکیشنز کا خاتمہ کرتا ہے۔
شگر میں کمی
غذائی ماہرین کے مطابق کریلوں میں گلائکوسائیڈ، چارنٹین، وائیسین، کیراویلوسائیڈز، اور پولی پیپٹائڈ پی (پلانٹ انسولین) کی بھاری مقدار ہونے کی وجہ سے یہ بلڈ شگر کو نارمل سطح پر رکھنے میں مدد فراہم کرتا ہے جب کہ کریلے مسلز کے سیلز کو بھی نارمل رکھنے میں مدد فراہم کرتے ہیں۔
جگر کی صفائی
ماہرین کے مطابق کریلوں کو ایک اہم کام جگر کی صفائی کرنا بھی ہے، اس میں شامل اجزا جہاں جگر کی صفائی کرتے ہیں، وہاں یہ جگر اور پٹھوں کے علاوہ دیگر جسمانی چربی کو بھی ہٹانے میں مفید ہے۔
جسمانی وزن میں کمی
کریلے اینٹی آکسائیڈنٹس سے بھرپور سبزی ہے جو کہ میٹابولزم اور نظام ہاضمہ کو بہتر کرتی ہے جس سے جسمانی وزن میں جلد کمی لانے میں مدد ملتی ہے۔
جسمانی توانائی بڑھائے
کریلے کا جوس اکثر پینا جسمانی اسٹینما بہتر کرتا ہے جبکہ جسمانی توانائی کو بھی بڑھاتا ہے اور ہاں اس کا استعمال نیند کا معیار بھی بہتر کرتا ہے۔
خون کی صفائی
جراثیم کش اور اینٹی آکسائیڈنٹس سے طھرپور ہونے کی وجہ سے کریلے کا جوس خون کی صفائی میں بھی مددگار ثابت ہوتا ہے اور جسم سے زہریلے مواد کا اخراج کرکے خون کی گردش کو بہتر کرتا ہے۔

It could be that you live in a time of vampires and werewolves. In this case, sleeping with a clove of garlic under your pillow should also be supported by a silver cross above your bed, holy water at the door and a wooden stake at your right hand.

If you keep garlic under your pillow below things will happen.

A study by the Dow University of Health Sciences in Karachi has revealed that certain variants of a human gene may offer resistance against the novel coronavirus, called SARS-CoV-2, which has infected more than 1.5 million people globally and killed tens of thousands.

The SARS-CoV-2 is a strain of the coronavirus, which also caused the severe acute respiratory syndrome and Middle East respiratory syndrome. The new strain of the coronavirus, however, has proven to be the most difficult to deal with, due to its fast spread.

The research by Dow University, which has been reviewed by peers and published in the Journal of Medical Virology, says that two variants of the ACE2 (angiotensin I converting enzyme 2) gene — that has been established as the functional receptor for the novel coronavirus — may make a person more resistant to the infection.

The research team, led by Dow College of Biotechnology's Vice Principal Dr Mushtaq Hussain, observed the binding of different variants of the ACE2 gene with the new coronavirus and noted that most of them "showed similar binding affinity for SARS-CoV-2 spike protein as observed in the complex structure of wild type ACE2 and SARS-CoV-2 spike protein".

However, the research team said that two allelic variations of the ACE2 gene, identified as S19P and E329G, "showed noticeable variations in their intermolecular interactions" with the virus.

The researchers studied mutations in ACE2 after examining over a thousand samples of the gene obtained by genomic data mining. The molecular structures of the variant genes were created by homology modelling. According to Dr Hussain, genome data had been extracted from individuals residing in China, Latin America and some European countries.

It should be noted that considering the number of countries that have been hit by Covid-19, the number of variants studied is quite low.

It is also pertinent to mention that the research does not suggest that the person who possesses the variants would become immune to the virus. They would not, however, experience severe symptoms and may only need to be isolated for two weeks.

Dow University's Vice Chancellor Muhammad Saeed Quraishy congratulated the research team on their findings and expressed hope that studies like these would enable the world in finding a way to curb the virus.

Lemons

When life gives you lemons … you're in luck. Lemons are full of vitamins, minerals, phytonutrients and antioxidants. They are especially good sources of vitamin C and folate.

Lemons are one of the most popular acid citrus fruits, according to the Purdue University Horticultural Department. Their origin is unknown, though some horticulturists theorize they come from Northern India. Lemons grow throughout southern Europe, the Middle East, and into East Asia. They were brought to the New World by Christopher Columbus in 1493. Today, the leading lemon producers are California, Arizona, Italy, Spain, Greece, Turkey, Cyprus, Lebanon, South Africa and Australia. 

Lemons are available throughout the year but summer is their peak season. Lemons are an extremely versatile fruit. You can eat them in slices, sip healthy lemon water, make lemonade, garnish food with them, candy their peels, and use their juice and peels in cooking and more. 

Nutrient profile

"Lemons are high in vitamin C, folate, potassium, flavonoids and compounds called limonins," said Alissa Rumsey, a New York City-based registered dietitian, certified strength and conditioning specialist and spokesperson for the Academy of Nutrition and Dietetics. "Limonins are found in the juice of the lemon."

According to World's Healthiest Foods, a quarter cup of lemon juice contains 31 percent of the recommended daily intake of vitamin C and 3 percent of folate and 2 percent of potassium — all for around 13 calories. A whole raw lemon contains 139 percent of the recommended daily vitamin C intake and has 22 calories. 

Recent studies have examined the role of lemons in accessing carotenoids, which are beneficial phytonutrients, from other foods during the digestive process. Carotenoids can have low bioaccessibility and bioavailability, meaning that even if you eat a carotenoid-rich food like carrots, you might not absorb many of the carotenoids. A 2018 study in International Journal of Nutrition and Food Engineering found that the carotenoids in boiled or mashed carrots, when combined with lemon juice, olive oil and whey curd, were nearly 30 percent more bioaccessible than without. This suggests that lemons can be an effective exigent food, meaning that, in addition to their own nutritional properties, they can unleash benefits from other foods when combined with them.

Here are the nutrition facts for lemons, according to the U.S. Food and Drug Administration, which regulates food labeling through the National Labeling and Education Act:

Health benefits

Immunity

"Vitamin C is plays a role in immunity and helps neutralize free radicals in our body," said Rumsey. According to the Linus Pauling Institute at Oregon State University, vitamin C stimulates the production of white blood cells and may protect the integrity of immune cells. Vitamin C helps protect leukocytes, which produces antiviral substances. 

Heart health

"Folic acid is said to aid in preventing strokes and may contribute to helping cardiovascular health by lowering homocysteine levels," Rumsey said. A 2010 meta-analysis published in The European Journal of Internal Medicine found that results from clinical studies examining folic acid and heart attacks were inconclusive but folic acid consumption can result in a modest improvement in stroke reduction. 

Vitamin C, too, is linked to a reduced risk of cardiovascular disease, said Rumsey. A 2015 study published in The American Journal of Clinical Nutrition looked at more than 100,000 people and found that those who ate the most fruits and vegetables had a 15 percent lower risk of developing heart disease. Those with the highest vitamin C levels in their plasma had even more reduced rates of heart disease. 

Scientists theorize that vitamin C may have cardiovascular benefits because it is an antioxidant that protects against dangerous free radicals. It also may lower bad LDL cholesterol and keep arteries flexible, according to the University of Maryland Medical Center.

"Studies have also shown the effect of limonin on lowering cholesterol," said Rumsey. In a 2007 study published in Alternative Therapies in Health and Medicine, men and women who had high cholesterol were given limonin and vitamin E daily for a month and their cholesterol levels lowered 20 to 30 percent. The researchers think that limonin reduces apolipoprotein B, which is associated with higher cholesterol levels. 

 

Kidney stones

Lemons and limes contain the most citric acid of any fruits, which makes them beneficial to those suffering from kidney stones. According to University of Wisconsin Health, citric acid deters stone formation and also breaks up small stones that are forming. The more citric acid in your urine, the more protected you are from forming new kidney stones. Half a cup of pure lemon juice every day or 32 ounces of lemonade has the same amount of citric acid as pharmacological therapy. 

Cancer

A 2011 study published in the Asian Pacific Journal of Cancer Prevention found that lemon extract applied to breast cancer cells induced cell death. The lemon extract was applied in-vitro, but the results may suggest powerful cancer-fighting properties in lemons.

Advertisement
 

"There are numerous studies being conducted to understand the role folate plays in cancer reduction," Rumsey said. A 2007 article in the American Journal of Clinical Nutrition notes that folate's possible cancer-reducing properties are likely linked to its role in the production of substances that silence cancer DNA. The study points out, however, that some research has suggested that in some cases high levels of folate could actually encourage cancer cell growth. The authors write, "Folate may provide protection early in carcinogenesis and in individuals with a low folate status, yet it may promote carcinogenesis if administered later and potentially at very high intakes."

 

Limonins have also been linked to a decrease in cancer risk, said Rumsey. A 2012 article in the Journal of Nutrigenetics and Nutrigenomicslooked at limonins in breast cancer cells and found that they could be a helpful aid to chemotherapy. 

 

Pregnancy health

 

"Folate is essential for pregnant women in order to prevent neural tube defects," said Rumsey. While folate is present in prenatal vitamins, consuming it through whole foods is an excellent way to make sure the body absorbs it. 

 

Lemons, peels and weight loss

 

Rumsey said, "Lemons are a great, low-calorie way to flavor drinks and food." And indeed, lemons, lemon water and lemon peels have become popular with dieters. A 2017 Scientific Reports study of short-term juice-based diets, all of which had lemon juice as a primary ingredient, saw that participants' intestinal microbiota associated with weight loss had improved, their vasodilator nitric oxide had increased and the oxidation of their lipids had decreased, resulting in improved wellbeing overall. 

 

Rumsey added that the peels also contain many nutrients. "Grating the peels and adding to salads, chicken or fish dishes can add a citrusy flavor. Peels can also be blended into smoothies or soups." But she emphasized against treating them like a magic bullet for detoxing and weight loss. 

 

Liver disease

 

New research in BioMed Research International suggests lemons may help damaged livers. The 2017 animal study found that rats who had severely damaged livers from alcohol intake saw liver improvement after consuming lemon juice. Lemon juice significantly inhibited negative effects associated with liver disease. More study is needed to determine if humans would see similar protective effects. 

Antimicrobial properties

Advertisement
 

Lemons are known for their antimicrobial properties. A 2017 book, "Phytochemicals in Citrus: Applications in Functional Foods,"describes how solvents made with lemon peel show antimicrobial activity against salmonella, staphylococcus and other pathogenic bacteria. A 2017 study in The Journal of Functional Foods found that fermented sweet lemon juice showed antibacterial activity against E. coli bacteria.

 

Contaminated nuts are a major source of human exposure to mycotoxin aflatoxin B1. Aflatoxins are carcinogens associated with liver cancer in cases of high exposure, according to the National Cancer Institute. A 2017 study in Food Control found that lemon juice can be effective in preventing exposure from contaminated nuts. Researchers roasted contaminated pistachio nuts in 30 ml of water, 15 ml of lemon juice and 2.25 g of citric acid at 120 degrees Celsius for 1 hour and saw that the nuts' level of aflatoxin B1 was reduced significantly to a much safer level without harm to the pistachios. 

Risks of consuming lemons

In general, lemons are quite good for you, but if consumed in excess, can cause gastric reflux problems or heartburn for those who suffer from the conditions. Additionally, the citric acid can wear down the enamel on your teeth, according to World's Healthiest Foods, which encourages drinking lemon water through a straw. 

11.png
Go to top